Aaj Ki Shab To Kisi Taur Guzar Jaegi

شاعرہ:پروین شاکر نظم آج کی شب تو کسی طور گزر جائے گی رات گہری ہے مگر چاند چمکتا ہے ابھی   میرے ماتھے پہ ترامزید پڑھیں

So Ab Ye Shart-E-Hayat Thahri

شاعرہ: پروین شاکر نظم سو اب یہ شرط حیات ٹھہریکہ شہر کے سب نجیب افراداپنے اپنے لہو کی حرمت سے منحرف ہو کے جینا سیکھیںمزید پڑھیں

Khwab

شاعرہ:پروین شاکر نظمخوابکھلے پانیوں میں گھری لڑکیاںنرم لہروں کے چھینٹے اڑاتی ہوئیبات بے بات ہنستی ہوئیاپنے خوابوں کے شہزادوں کا تذکرہ کر رہی تھیںجو خاموشمزید پڑھیں

Gulab Hath Mein Ho Aankh Mein Sitara Ho

شاعرہ:پروین شاکر غزل گلاب ہاتھ میں ہو آنکھ میں ستارہ ہو کوئی وجود محبت کا استعارہ ہو میں گہرے پانی کی اس رو کے ساتھمزید پڑھیں