Tarash Kar Mere Bazu Udan Chhod Gaya

شاعرہ:پروین شاکر غزل تراش کر مرے بازو اڑان چھوڑ گیا ہوا کے پاس برہنہ کمان چھوڑ گیا   رفاقتوں کا مری اس کو دھیان کتنامزید پڑھیں

Khushi Ki Baat Hai Ya Dukh Ka Manzar Dekh Sakti Hun

شاعرہ:پروین شاکر غزل خوشی کی بات ہے یا دکھ کا منظر دیکھ سکتی ہوں تری آواز کا چہرہ میں چھو کر دیکھ سکتی ہوں ابھیمزید پڑھیں

Sham Aai Teri Yaadon Ke Sitare Nikle

شاعرہ :پروین شاکر غزل شام آئی تری یادوں کے ستارے نکلے رنگ ہی غم کے نہیں نقش بھی پیارے نکلے ایک موہوم تمنا کے سہارےمزید پڑھیں

Hum nay hi lotany ka irada nahi kiya

شاعرہ:پروین شاکِر غزل ہم نے ہی لوٹنے کااِرادہ نہیں کیااُس نے بھی بھول جانے کا وعدہ نہیں کیا دکھ اُوڑھتے نہیں بزم طرب میں ہمملبوسمزید پڑھیں