Hath Khali hain tere shahr se jate jate

شاعر: راحت اندوری ہاتھ خالی ہیں ترے شہر سے جاتے جاتےجان ہوتی تو مری جان لٹاتے جاتے اب تو ہر ہاتھ کا پتھر ہمیں پہچانتامزید پڑھیں

Sirf Khanjar Hi Nahi Aankhon Mein Pani Chahiye

شاعر: راحت اندوری صرف خنجر ہی نہیں آنکھوں میں پانی چاہئےاے خدا دشمن بھی مجھ کو خاندانی چاہئے شہر کی ساری الف لیلائیں بوڑھی ہومزید پڑھیں

Bulati Hai Magar Jaane Ka Nain

شاعر: راحت اندوری بلاتی ہے مگر جانے کا نئیںوہ دنیا ہے ادھر جانے کا نئیں زمیں رکھنا پڑے سر پر تو رکھوچلو ہو تو ٹھہرمزید پڑھیں