Kiya Bola Mujhy Khud Ko Tumhaara Nahi Kehna

نظم
کیا بولا مجھے خود کو تمہارا نہیں کہنا
یہ بات کبھی مجھ سے دوبارہ نہیں کہنا

یہ حکم بھی اُس جان سے پیارے نے دیا ہے
کچھ بھی ہو مجھے جان سے پیارا نہیں کہنا

زندگی آخری لمحوں میں منا لیتی ہے
اک آواز کے جو مجھ کو بچا لیتی ہے

جس پر مرتی ہو اُس کو مڑ کے نہیں دیکھتی وہ
اور جسے مارنا ہو یار بنا لیتی ہے
Nazam
Kiya Bola Mujhy Khud Ko Tumhaara Nahi Kehna
Yeh baat kabhi mujh sy dubara nahi kehna

Yeh hukam bhi us jaan sy peyary nay diya hai
Kuch bhi ho mujhy jaan sy peyara nahi kehna

Zindgi Akhari Lamhon main mana laite hai
Ek awaz ky jo mujh ko bacha laite hai

Jis per marti ho us ko nur kr nahi dekhti wo
aur jesay marna ho yaar bana laite hai

اپنا تبصرہ بھیجیں