Ab Ke Bichara Hai Tu Kuch Na-Shadman

Ab Ke Bichara Hai Tu Kuch Na-Shadman

Ab Ke Bichara Hai Tu Kuch Na-Shadman Wo Bhi Tou hai
Dhop ham par hi nahi hai saibaan wo bhi tou hai

Shikwa bidad mausam es se kijiye bhi tu kyun
Kia kare wo bhi keh zir asman wo bhi tou hai

Aur ab kia chahte hain log dekhein tou sahi
Dar ba-dar ham hi nahi be khan-nomaa wo bhi tou hai

Aik hi dastak jahan chukkaye rakhe sari umer
Aik andaz shikast jism-o-jaan wo bhi tou hai

Es tarf bhi ek nazar aa rehr-o-manzil naseb
Wo jo manzil par luta hai karwan wo bhi tou hai

Ab ke bichara hai tu kuch na-shadman wo bhi tu hai
Dhop ham par hi nahi hai saibaan wo bhi tou hai
غزل
اب کے بچھڑا ہے تو کچھ نا شادماں وہ بھی تو ہے
دھوپ ہم پر ہی نہیں بے سائباں وہ بھی تو ہے

شکوہ بیداد موسم اس سے کیجیے بھی تو کیوں
کیا کرے وہ بھی کہ زیر آسماں وہ بھی تو ہے

اور اب کیا چاہتے ہیں لوگ دیکھیں تو سہی
در بدر ہم ہی نہیں بے خانماں وہ بھی تو ہے

ایک ہی دستک جہاں چونکائے رکھے ساری عمر
ایک اندازِ شکست جسم و جاں وہ بھی تو ہے

اس طرف بھی اک نظر اے رہرو منزل نصیب
وہ جو منزل پر لٹا ہے کارواں وہ بھی تو ہے

اب کے بچھڑا ہے تو کچھ ناشادماں وہ بھی تو ہے
دھوپ ہم پر ہی نہیں بے سائباں وہ بھی تو ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں