Rang Tehzeb-O-Tamadon Ke Shanasa Hum

Rang Tehzeb-O-Tamadon Ke Shanasa Hum

Rang Tehzeb-O-Tamadon Ke Shanasa Hum Bhi Hain
Suraat aienaa marhoon tamasha hum bhi hain

Hal-e-mustaqbil ka kia hum ko sabq detay hain
Es qadar tou waqif amrooz-o-farda hum bhi hain

Badal na khwastah hansatay hain duniya ke liye
Warna yeh sach hai peshemaan hum bhi hain

Kuch safeenen hain ke tufaan se hai jin ki saz baz
Dekhne walon mein ek biron-e-darya hum bhi hain

Dekhna hai tou dekh lo uthti hoi mehfil ka rang
Subah ke bujhtay chiraghon ka sunbhala hum bhi hain

Kaghazi malbos mein obrie hai har shakal hayat
Rait ki chadar pe ek naqsh kaf pa hum bhi hain

Ja baja bikhray nazar aatay hain asar-e-qadema
Pi gaien jis ko guzar gahain wo darya hum bhi hain

Rang tehzeb-o-tamadon ke shanasa hum bhi hain
Suraat aienaa marhoon tamasha hum bhi hain
غزل
رنگ تہذیب و تمدن کے شناسا ہم بھی ہیں
صورت آئینہ مرہون تماشا ہم بھی ہیں

حال و مستقبل کا کیا ہم کو سبق دیتے ہیں
اس قدر تو واقف امروز و فردا ہم بھی ہیں

بادل نا خواستہ ہنستے ہیں دنیا کے لیے
ورنہ یہ سچ ہے پشیماں ہم بھی ہیں

کچھ سفینے ہیں کہ طوفاں سے ہے جن کی ساز باز
دیکھنے والوں میں اک بیرون دریا ہم بھی ہیں

دیکھنا ہے تو دیکھ لو اٹھتی ہوئی محفل کا رنگ
صبح کے بجھتے چراغوں کا سنبھالا ہم بھی ہیں

کاغذی ملبوس میں ابھری ہے ہر شکل حیات
ریت کی چادر پہ اک نقش کف پا ہم بھی ہیں

جا بجا بکھرے نظر آتے ہیں آثار قدیم
پی گئیں جس کو گزر گاہیں وہ دریا ہم بھی ہیں

رنگ تہذیب و تمدن کے شناسا ہم بھی ہیں
صورت آئینہ مرہون تماشا ہم بھی ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں