Pur Sukoon Aise Bhi Ho Letaa Hun Main

Ghazal
Pur Sukoon Aise Bhi Ho Letaa Hun Main
Ch’hoo nahi paataa tou ro letaa hun main

Us ki khaatir itna jaga hun keh ab
Us ke hisse ka bhi so letaa hun main

Are dreshak din main us ki yaad se perhez hai
Yeh dawi raat ko letaa hun main

Mujhko sajday ki sahulat hai ali
Dagh koi bhi ho dho letaa hun main

Pur sukoon aise bhi ho letaa hun main
Ch’hoo nahi paataa tou ro letaa hun main
غزل
پر سکوں ایسے بھی ہو لیتا ہوں میں
چھو نہیں پاتا تو رو لیتا ہوں میں

اُس کی خاطر اتنا جاگا ہوں کہ اب
اُس کے حصے کا بھی سو لیتا ہوں میں

ارے دریشک دن میں اُٗس کی یاد سے پرہیز ہے
یہ دوائی رات کو لیتا ہوں میں

مجھکو سجدے کی سہولت ہے علیؔ
داغ کوئی بھی ہو دھو لیتا ہوں میں

پر سکوں ایسے بھی ہو لیتا ہوں میں
چھو نہیں پاتا تو رو لیتا ہوں میں

اپنا تبصرہ بھیجیں