Yeh Marhale Bhi Dekhe Mohabbat Mein Toot Ke

Yeh Marhale Bhi Dekhe Mohabbat Mein Toot Ke

Yeh Marhale Bhi Dekhe Mohabbat Mein Toot Ke
Roye hain kihilkila ke hanse phoot phoot ke

Iss bar phir nai kisi soorat mein aaye ga
Ek do nahi hazar haan chehre hain jhoot ke

Aye rehzan hayat bata sukh ke dhair se
Kia mil gaya tujhe mera hissa khasoot ke

Bikhren gay yun keh phir nahi ho payen gay shumaar
Jis roz gir gaye tere hathon se chhoot ke

Tark-e-talluqat ka mojab nah pochye
Pewand hum lage usay makhmal ke suit ke

Yeh marhale bhi dekhe mohabbat mein toot ke
Roye hain kihilkila ke hanse phoot phoot ke
غزل
یہ مرحلے بھی دیکھے محبت میں ٹوٹ کے
روئے ہیں کِھلکِلا کے ہنسے پھوٹ پھوٹ کے

اِس بار پھر نئی کسی صورت میں آئے گا
اک دو نہیں ہزار ہاں چہرے ہیں جھوٹ کے

اے راہزن حیات بتا سکھ کے ڈھیر سے
کیا مل گیا تجھے مرا حصہ کھسوٹ کے

بکھریں گے یوں کہ پھر نہیں ہو پائیں گے شمار
جس روز گر گئے ترے ہاتھوں سے چھوٹ کے

ترکِ تعلقات کا موجب نہ پوچھیے
پیوند ہم لگے اُسے مخمل کے سوٹ کے

یہ مرحلے بھی دیکھے محبت میں ٹوٹ کے
روئے ہیں کِھلکِلا کے ہنسے پھوٹ پھوٹ کے
Poet: Komal Joya

اپنا تبصرہ بھیجیں