Yaad Ayon Tou Bas Itni Si Aniyat Karna

Yaad Ayon Tou Bas Itni Si Aniyat Karna

Yaad Aon Tou Bas Itni Si Inayat Karna
Apne badaltay howay lehje ki wazahat karna

Tum tou chahat ka shakar howa karty thay
Kis se sikha hai ulfat mein milawat karna
Ham sazaon ke haqdar banay hain kab se
Tum hi keh do keh juram hai kia mohabbat karna
Teri furqat mein yeh aankhen abhi tak nam hain
Kabhi ana meri ashkon ki ziyarat karna
Dil mein ab mohabbat ke diye hain roshan
Dekho bhulay nahi teri hasti ki sajawt karna
Yaad aon tou bas itni si inayat karna
Apne badaltay howay lehje ki wazahat karna
غزل
یاد آؤں تو بس اتنی سی عنایت کرنا
اپنے بدلتے ہوئے لہجے کی وضاحت کرنا
تم تو چاہت کا شاہکار ہوا کرتے تھے
کس سے سیکھا ہے الفت میں ملاوٹ کرنا
ہم سزاؤں کے حقدار بنے ہیں کب سے
تم ہی کہہ دو کہ جرم ہے کیا محبت کرنا
تیری فرقت میں یہ آنکھیں ابھی تک نم ہیں
کبھی آنا میری اشکوں کی زیارت کرنا

دل میں اب محبت کے دیے ہیں روشن
دیکھو بھولے نہیں تیری ہستی کی سجاوٹ کرنا
یاد آؤں تو بس اتنی سی عنایت کرنا
اپنے بدلتے ہوئے لہجے کی وضاحت کرنا

اپنا تبصرہ بھیجیں