Johri Ko Kya Maloom Kis Tarha Ki

Bikhar Jayengay Hum Kya Jab Tamasha

Bikhar Jayengay Hum Kya Jab Tamasha Khatm Hoga
Mere mabood aakhir kab tak tamasha khatm hoga

Chiragh-e-hujra darwish ki bujhti hoi lau
Hawa se keh gai hai ab tamasha khatm hoga

Kahani mein naye kirdaar shamil ho gaye hain
Nahi maloom ab kis dhab tamasha khatm hoga

Kahani aap uljhi hai keh uljhayi gai hai
Yeh aqida tab khulega jab tamasha khatm hoga

Zamen jab adl se bhar jayegi noor ala noor
Banam-e-maslak-o-mazhab tamasha khatm hoga

Yeh sab kath putliyaan raqsan rahengi raat ki raat
Sahar se pehle pehle sab tamasha khatm hoga

Tamasha karne walon ko khabar di ja chuki hai
Keh parda kab girega kab tamasha khatm hoga

Dil na mutmaen aisa bhi kya mayoos rehna
Jo khalq utthi tu sab kartab tamasha khatm hoga

Bikhar jayengay hum kya jab tamasha khatm hoga
Mere mabood aakhir kab tak tamasha khatm hoga
غزل
بکھر جائیں گے ہم کیا جب تماشا ختم ہوگا
مرے معبود آخر کب تماشا ختم ہوگا

چراغ حُجرہ درویش کی بجھتی ہوئی لو
ہوا سے کہہ گئی ہے اب تماشا ختم ہوگا

کہانی میں نئے کردارشامل ہوگئے ہیں
نہیں معلوم اب کس ڈھب تماشا ختم ہوگا

کہانی اپ الجھی ہے کہ الجھائی گئی ہیں
یہ عقدہ تب کھلے گا جب تماشا ختم ہوگا

زمیں جب عدل سے بھر جائے گی نور علی نور
بنام مسلک و مذہب تماشا ختم ہوگا

یہ سب کٹھ پتلیاں رقصاں رہیں گی رات کی رات
سحر سے پہلے پہلے سب تماشا ختم ہوگا

تماشا کرنے والوں کو خبر دی جا چکی ہے
کہ پردہ کب گرےگا کب تماشا ختم ہوگا

دل نامطمئن ایسا بھی کیا مایوس رہنا
جو خلق اٹھی تو سب کرتب تماشا ختم ہوگا

بکھر جائیں گے ہم کیا جب تماشا ختم ہوگا
مرے معبود آخر کب تماشا ختم ہوگا

اپنا تبصرہ بھیجیں