Tum Jo Kehtay Ho Sunon Ga

غزل
تم جو کہتے ہو سنو گا،جو پکارو گے مجھے
جانتا ہو تم ہی گھیر کر مارو گے مجھے

میں بھی اک شخص پے اک شرت لگا بیٹھا تھا
تم بھی اک روز اسی کھیل میں ہارو گے مجھے

عید کے دن کی طرح تم نے مجھے ضائع کیا
میں سمجھتا تھا محبت سے گزارو گے مجھے
Ghazal
Tum Jo Kehtay Ho Sunon Ga , Jo Pokaro Gay Mujhy
Jantay ho tum hi gheir kar maro gay mujhy

Main bhi ek shakhs py ek shart laga betha tha
Tum bhi ek roz ise khel main haroo gay mujhy

Eid ky din ki tarah tum nay mujhy zayiaa kiya
Main samajhta tha mohabbat say gazaroo gay mujhy
 

اپنا تبصرہ بھیجیں