Tera Chup Rehna Meray Zehin Mein Kia Baith Gaya

Tera Chup Rehna Meray Zehin Mein Kia Baith Gaya

Tera Chup Rehna Meray Zehin Mein Kia Baith Gaya
Itni aawazain tujhe dein keh gala baith gaya

Youn nahi hai keh faqt mein hi usay chahta hoon
Jo bhi es paid ki chhaon mein gaya baith gaya

Apna larna bhi muhabbat hai tumhain ilm nahi
Chekhti tum rahi aur mera gala baith gaya

Baat daryaon ki suraj ki na teri hai yahaan
Do qadam jo bhi mere sath chala baith gaya

Itna metha tha wo ghussay bhra lehja mat poch
Us nay jis jis ko bhi jane ka kaha baith gaya

Bazm-e-janan mein nashistain nahi dekhi jati
Jo bhi ek bar jahan baith gaya baith gaya

Us ki marzi wo jise pas baithaye apne
Es peh kia larna falan meri jaga baith gaya

Tera chup rehna meray zehin mein kia baith gaya
Itni aawazain tujhe dein keh gala baith gaya
غزل
تیرا چب رہنا میرے ذہن میں کیا بیٹھ گیا
اتنی آوازیں تجھے دیں کہ گلا بیٹھ گیا

یوں نہیں ہے کہ فقط میں ہی اُسے چاہتا ہوں  
جو بھی اس پیڑ کی چھاؤں میں گیا بیٹھ گیا

اپنا لڑنا بھی محبت ہے تمہیں علم نہیں
چیختی تم رہی اور میرا گلا بیٹھ گیا

بات دریاؤں کی سورج کی نہ تیری ہے یہاں
دو قدم جو بھی مرے ساتھ چلا بیٹھ گیا

اتنا میٹھا تھا وہ غصے بھرا لہجہ مت پوچھ
اس نے جس جس کو بھی جانے کا کہا بیٹھ گیا

بزمِ جاناں میں نشستیں نہیں دیکھی جاتی
جو بھی اک بار جہاں بیٹھ گیا بیٹھ گیا

اس کی مرضی وہ جسے پاس بٹھائے اپنے
اس پہ کیا لڑنا فلاں میری جگہ بیٹھ گیا

تیرا چب رہنا میرے ذہن میں کیا بیٹھ گیا
اتنی آوازیں تجھے دیں کہ گلا بیٹھ گیا

اپنا تبصرہ بھیجیں