Raat Din Khawab Bunti Hoi Zindagi

Raat Din Khawab Bunti Hoi Zindagi

Raat Din Khawab Bunti Hoi Zindagi
Dil mein naqd-e-izafi ki lo

Aankh bar-e-amanat se chor
Moj-e-ḳhun be-niyaz-e-mal

Dasht-e-be-rang se dard ke phol chunti hoi zindagi
Khauf-o-amandagi se hajil

Arzuon ke ashob se muzmahil
Munh ke bal ḳhaak par aa parri

Har taraf ek bhayanak sukut
Koi nauha na aansu na phool

Hasil-e-jism-o-jan be-nishan
 Rahguzaron ki dhul

Ajnabi sheher mein
Khak-basar hoi zindagi
Kaisi be-ghar hoi zindagi

Raat din ḳhwab bunti hoi zindagi
Dil mein naqd-e-izafi ki lo
نظم
رات دن خواب بُنتی ہوئی زندگی
دل میں نقدِ اضافی کی لو

آنکھ بارِ امانت سے چور
موجِ خوں بے نیازِ مآل

دشت بے رنگ سے درد کے پھول چنتی ہوئی زندگی
خوف و اماندگی سے حجل

آرزووں کے آشوب سے مضمحل
منہ کے بل خاک پر آپڑی

ہر طرف اک بھیانک سکوت
کوئی نوحہ نہ آنسو نہ پھول

حاصل جسم و جاں بے نشاں
رہ گزاروں کی دھول

اجنبی شہر میں
خاک بسر ہوئی زندگی
کیسی بے گھر ہوئی زندگی

رات دن خواب بُنتی ہوئی زندگی
دل میں نقدِ اضافی کی لو

اپنا تبصرہ بھیجیں