Na Es Gali Mein Na Es Shaher Bhar Mein Koi Hai,anwar shoor ghazal

Na Es Gali Mein Na Es Shaher Bhar Mein Koi Hai

Na Es Gali Mein Na Es Sheher Bhar Mein Koi Hai
Yahaan se door hamari nazar mein koi hai

Hamare samne rehta hai yeh sawal aksar
Khushi bhi zindagi-e-mukhtasar mein koi hai 

Kabhi kabhi mujhe lagta hai ghar mein koi nahi
Kabhi kabhi mujhe lagta hai ghar mein koi hai

Na es gali mein na es sheher bhar mein koi hai
Yahaan se door hamari nazar mein koi hai
غزل
نہ اس گلی میں نہ اس شہر بھر میں کوئی ہے
یہاں سے دور ہماری نظر میں کوئی ہے 

ہمارے سامنے رہتا ہے یہ سوال اکثر
خوشی بھی زندگیِ مختصر میں کوئی ہے 

کبھی کبھی مجھے لگتا ہے گھر میں کوئی نہیں
کبھی کبھی مجھے لگتا ہے گھر میں کوئی ہے

نہ اس گلی میں نہ اس شہر بھر میں کوئی ہے
یہاں سے دور ہماری نظر میں کوئی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں