Mein Sun Raha Hoon Usay Jo Sunai Deta Nahi

Mein Sun Raha Hoon Usay Jo Sunai Deta Nahi

Mein Sun Raha Hoon Usay Jo Sunai Deta Nahi
Mein dekhta hoon usay jo dekhai deta nahi

Bahut qayaam ki khaih safar mein ati hai
Tilism-e-sham e ghariban rahai deta nahi

Hai shooq anjoman arai hassan ko bhi magar
Majhal us ko gham-e-ranhai deta nahi

Wisal arz-e-sama ka sama hai jaise koi
Andhera itna howa keh kuch sojhai deta nahi

Munir khool day barh kar dar-e-diyar-e-nigah
Khamosh rehta hai kyu ab dohai deta nahi

Mein sun raha hoon usay jo sunai deta nahi
Mein dekhta hoon usay jo dekhai deta nahi
غزل
میں سن رہا ہوں اُسے جو سنائی دیتا نہیں
میں دیکھتا ہوں اُسے جو دیکھائی دیتا نہیں

بہت قیام کی خاہش سفر میں آتی ہے
طلسمِ شام غریباں ریائی دیتا نہیں

ہے شوق انجمن آرائی حسن کو بھی مگر
مجال اُس کو غمِ رنائی دیتا نہیں

وصال ارضُ سماں کا سماں ہے جیسے کوئی
اندھیرا اتنا ہوا کہ کچھ سجھائی دیتا نہیں

منیرؔ کھول دے بڑھ کر درِ دیارِ نگاہ
خاموش رہتا ہے کیوں اب دہائی دیتا نہیں

میں سن رہا ہوں اُسے جو سنائی دیتا نہیں
میں دیکھتا ہوں اُسے جو دیکھائی دیتا نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں