Kon Teray Paas Say Uth Kar Ghar Jata Hai

غزل

کون تیرے پاس سے اٹھ کر گھر جاتا ہے
تم جس کوبھی چھو لیتی ہو وہ مر جاتا ہے

جیسے تم نے وقت کو ہاتھ سے روکا ہو
سچ تو یہ ہے تم آنکھوں کا دھوکہ ہو

اسی لیے تو سب سے زیادہ بھاتی ہو
کتنے سچے دل سے جھوٹی قسمیں کھاتی ہو
GHAZAL
Kon Teray Paas Say Uth Kar Ghar Jata Hai
Tum jis ko bhi cho laiti ho wo mar jata hai

Jesay tum nay waqt ko hath say roka ho
Such tu yeh hai tum aankhon ka dhoka ho

Ise leya tu sab say zaida bhaati ho
Kitnay suchay dil sy jhooti kasmy khati ho

اپنا تبصرہ بھیجیں