Jane de

جانے دے:
قربتِ لمس کو گالی نہ بنا
پیار میں جسم کو یکسر نہ مِٹا
جانے دے

تو جو ہر روز نئے حسن پہ مر جاتا ہے
تو بتاے گا مجھے عشق ہے کیا
جانے دے

چائے پیتے ہیں کہیں بیٹھ کے دونو بھائی
جا چکی ہے نا تو بس چھوڑ چل آ
جانے دے

جانتا ہوں کہ تجھے کون سی مجبوری تھی
اب میرے سامنے ٹسوے نہ بہا
جانے دے

تو کہ جنگل میں لگی آگ سی بے ساختہ ہے
خود پہ تہذیب کی چادر نہ چڑھا
جانے دے

:Jane de
Qurbat e lams ko gali na bna
Pyar mein jism kw yaksar na mita
Jane de

Tu jo har roz naae husn peh marr jata hai
Tu btay ga mujhe ishq hai kya
Jane de

Chai peete hain kahi beth ke dono bhai
Ja chuki hai na to bss chodh chal aa
Jane de

Janta hunk eh tujhe kon si mjboori thi
Ab mere samne tsve na baha
Jane de

Tu keh jungle mein lagi aag sii be saakhta hai
Khud pe Tehzeeb ki chadar na chdha
jane de

اپنا تبصرہ بھیجیں