Jab Bhi Tum Se Milte Hain Hum

Jab Bhi Tum Se Milte Hain Hum

Jab Bhi Tum Se Milte Hain Hum
Tum hotay ho hum nahi hotay

Bichhare rehte hain hum khud se
Hotay hain har dam nahi hotay

Mana mere pass nahi tum
Tere pas bhi hum nahi hotay

Hum jaison ko nah bhi gino
Hum marjate hain kam nahi hotay

Bhatke howon se ja kar kehna
Rastay char qadam nahi hotay

Jab bhi tum se milte hain hum
Tum hotay ho hum nahi hotay
غزل
جب بھی تم سے ملتے ہیں ہم
تم ہوتے ہو ہم نہیں ہوتے

بچھڑے رہتے ہے ہم خود سے
ہوتے ہیں، ہر دم نہیں ہوتے

مانا میرے پاس نہیں تم
تیرے پاس بھی ہم نہیں ہوتے

ہم جیسوں کو نہ بھی گنو
ہم مرجاتے ہیں کم نہیں ہوتے

بھٹکے ہوؤں سے جاکر کہنا
رستے چار قدم نہیں ہوتے

جب بھی تم سے ملتے ہیں ہم
تم ہوتے ہو ہم نہیں ہوتے

اپنا تبصرہ بھیجیں