Himmat E Iltija Nahin Baqi

ہمت التجا نہیں باقی
ضبط کا حوصلہ نہیں باقی
اک تری دید چھن گئی مجھ سے
ورنہ دنیا میں کیا نہیں باقی
اپنی مشق ستم سے ہاتھ نہ کھینچ
میں نہیں یا وفا نہیں باقی
تیری چشم الم نواز کی خیر
دل میں کوئی گلا نہیں باقی
ہو چکا ختم عہد ہجر و وصال
زندگی میں مزا نہیں باقی
himmat-e-iltija nahin baqi
zabt ka hausla nahin baqi

ek teri did chhin gai mujh se
warna duniya mein kya nahin baqi

apni mashq-e-sitam se hath na khinch
main nahin ya wafa nahin baqi

teri chashm-e-alam-nawaz ki khair
dil mein koi gila nahin baqi

ho chuka khatm ahd-e-hijr-o-visal
zindagi mein maza nahin baqi

اپنا تبصرہ بھیجیں