Hai Aap Ke Honton Pe Jo Muskaan Wagairah

ہے آپ کے ہونٹوں پہ جو مسکان وغیرہ
قربان گئے اس پہ دل و جان وغیرہ
بلی تو یوں ہی مفت میں بدنام ہوئی ہے
تھیلے میں تو کچھ اور تھا سامان وغیرہ
بے حرص و غرض قرض ادا کیجیے اپنا
جس طرح پولس کرتی ہے چالان وغیرہ
اب ہوش نہیں کوئی کہ بادام کہاں ہے
اب اپنی ہتھیلی پہ ہیں دندان وغیرہ
کس ناز سے وہ نظم کو کہہ دیتے ہیں نثری
جب اس کے خطا ہوتے ہیں اوزان وغیرہ
جمہوریت اک طرز حکومت ہے کہ جس میں
گھوڑوں کی طرح بکتے ہیں انسان وغیرہ
ہر شرٹ کی بوشرٹ بنا ڈالی ہے انورؔ
یوں چاک کیا ہم نے گریبان وغیرہ
hai aap ke honton pe jo muskan waghaira
qurban gae us pe dil o jaan waghaira
 
billi to yunhi muft mein badnam hui hai
thaile mein to kuchh aur tha saman waghaira
 
be-hirs-o-gharaz qarz ada kijiye apna
jis tarah police karti hai chaalan waghaira
 
ab hosh nahin koi ki baadam kahan hai
ab apni hatheli pe hain dandan waghaira
 
kis naz se wo nazm ko kah dete hain nasri
jab us ke khata hote hain auzan waghaira
 
jamhuriyat ek tarz-e-hukumat hai ki jis mein
ghodon ki tarah bikte hain insan waghaira
 
har shirt ki bushirt bana dali hai ‘anwar’
yun chaak kiya hum ne gareban waghaira

اپنا تبصرہ بھیجیں