Milne Ka Jab Kaha To Mila, Dukh Howa Mujhe

Milne Ka Jab Kaha To Mila, Dukh Howa Mujhe

Milne Ka Jab Kaha To Mila, Dukh Howa Mujhe
Mein ne bhi mil ke moun peh kaha, dukh howa mujhe

Mein chahta tha mujh se bichhar kar woh khush rahe
Lekin woh khush howa tu bara dukh howa mujhe

Sassi ki dastaan suni thi guzishta shab
Mere Baloch dost ada, dukh howa mujhe

Aik dukh tha jis ka mujh ko nahi ho raha tha dukh
Lekin jab uss ko dukh nah howa, dukh howa mujhe

Uss ke deye dukhon peh alag ghamzada tha mein
Aur inteqaam le ke juda, dukh howa mujhe

Lagta hai mere rad amal se nahi laga
Lekin yaqeen kar ba khuda, dukh howa mujhe

Tab yeh pata chala keh mujhe uss se ishq hai
Jab uss ke dukh peh uss se siwa, dukh howa mujhe

Milne ka jab kaha to mila, dukh howa mujhe
Mein ne bhi mil ke moun peh kaha, dukh howa mujhe
غزل
ملنے کا جب کہا تو ملا, دکھ ہوا مجھے
میں نے بھی مل کے منہ پہ کہا دکھ ہوا مجھے

میں چاہتا تھا مجھ سے بچھڑ کر وہ خوش رہے
لیکن وہ خوش ہوا تو بڑا دکھ ہوا مجھے

سسی کی داستان سنی تھی گزشتہ شب
میرے بلوچ دوست ادا دکھ ہوا مجھے

اک دکھ تھا جس کا مجھ کو نہیں ہو رہا تھا دکھ
لیکن جب اُس کو دکھ نہ ہوا دکھ ہوا مجھے

اُس کے دیئے دکھوں پہ الگ غمزدہ تھا میں
اور اِنتقام لے کے جُدا دکھ ہوا مجھے

لگتا ہے میرے رد عمل سےنہیں لگا
لیکن یقین کر بخدا دکھ ہوا مجھے

تب یہ پتہ چلا کہ مجھے اُس سے عشق ہے
جب اُس کے دکھ پہ اُس سے سوا دکھ ہوا مجھے

ملنے کا جب کہا تو ملا, دکھ ہوا مجھے
میں نے بھی مل کے منہ پہ کہا دکھ ہوا مجھے

اپنا تبصرہ بھیجیں