Yeh Baat Soch Ke Tere Hoye Hain Hum Dono

Yeh Baat Soch Ke Tere Hoye Hain Hum Dono

Yeh Baat Soch Ke Tere Hoye Hain Hum Dono
Keh tujh ko le ke bohat lar chuke hai hum dono

Yeh sarhade to abhi kal bani hain mere dost
Hazaron saal ikhate reh chuke hain hum dono

Koi to tha woh jawab khafze ka hissa nahi
Woh baat kiya thi jo bhole hoye hain hum dono

Tum aisi baat kisi ko nahi bataogi
Mujhe laga tha bare ho chuke hain hum dono

Hazaron jore gulabon mein chupke bethe hain
Yeh aur baat hai keh pakre gaye hain hum dono

Yeh baat soch ke tere hoye hain hum dono
Keh tujh ko le ke bohat lar chuke hai hum dono
غزل
یہ بات سوچ کے تیرے ہوے ہیں ہم دونوں
کہ تجھ کو لے کے بہت لڑ چکے ہے ہم دونوں

یہ سرحدیں تو ابھی کل بنی ہیں میرے دوست
ہزاروں سال اکھٹے رہ چکے ہیں ہم دونوں

کوئی تو تھا وہ جو اب خافظے کا حصہ نہیں
وہ بات کیا تھی جو بھولے ہوئے ہیں ہم دونوں

تم ایسی بات کسی کو نہیں بتاؤ گی
مجھے لگا تھا بڑے ہو چکے ہیں ہم دونوں

ہزاروں جوڑے گلابوں میں چپکے بیھٹے ہیں
یہ اور بات ہے کہ پکڑے گئے ہیں ہم دونوں

یہ بات سوچ کے تیرے ہوے ہیں ہم دونوں
کہ تجھ کو لے کے بہت لڑ چکے ہے ہم دونوں

اپنا تبصرہ بھیجیں