Apne Siwa Jo Meri Dua Hi Koi Nahi| Ali Zaryoun

Apne Siwa Jo Meri Dua Hi Koi Nahi| Ali Zaryoun

Apne Siwa Jo Meri Dua Hi Koi Nahi
Mere ilawa mujh se juda hi koi nahi

Kiya moun uthaye mujh mein chale aa rahe ho tum
Bharne ko jaise aur khalaa hi koi nahi

Tum ne jo mere kaan mein poochi hai woh jaga
Aisi to meri jaan jaga hi koi nahi

Ghalib ko tanz meer ko matrooh kehh diya
Yeh shairi hai yani hayaa hi koi nahi

Khush bakht ho keh ik dilasa to hai tumhein
Aur woh keh jis ke pass khuda hi koi nahi

Kuch naqliyon ka shoor hai jo sehh raha hoon mein
Asli to mar gaye hain bacha hi koi nahi

Rote howon ko dekh ke mein ro para ali
Kyun ro para tha mere tu tha hi koi nahi

Apne siwa jo meri duaa hi koi nahi
Mere ilawa mujh se juda hi koi nahi
غزل
اپنے سوا جو میری دعا ہی کوئی نہیں
میرے علاوہ مجھ سے جدا ہی کوئی نہیں

کیا منہ اُٹھائے مجھ میں چلے آرہے ہو تم
بھرنے کوجیسے اور خلاء ہی کوئی نہیں

تم نے جو میرے کان میں پوچھی ہی وہ جگہ
ایسی تو میری جان جگہ ہی کوئی نہیں

غالب پہ طنز، میر کو متروک کہہ دیا
یہ شاعری ہے یعنی ، حیا ہی کوئی نہیں

خوش بخت ہو کہ اک دلاسہ تو ہے تمہیں
اور وہ کہ جن کے پاس خدا ہی کوئی نہیں

کچھ نقلیوں کا شور ہے جو سہہ رہا ہوں میں
اصلی تو مر گئے ہیں بچا ہی کوئی نہیں

روتے ہوؤں کو دیکھ کے میں رو پڑا علی
کیوں رو پڑا تھا میرا تو تھا ہی کوئی نہیں

اپنے سوا جو میری دعا ہی کوئی نہیں
میرے علاوہ مجھ سے جدا ہی کوئی نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں