Apnay Pyaaron Say Bahut Door Nahi Hota Tha

Ghazal
Apne Pyaaron Se Bahut Door Nahi Hota Tha
Yaar tou un dino mashoor nahi hota tha

Mujhko lagta hai tujhe dil ki dua lag gae hai
Tere chehray per tou noor nahi hota tha

Tere hotay bhi musafat ke yahi maslay thay
Per thakawat se badan choor nahi hota tha

Koi tou dukh jo wapis nahi jane deta
Warna main ghar se  kabhi door nahi hota tha

Apne pyaaron se bahut door nahi hota tha
Yaar tou un dino mashoor nahi hota tha
غزل
اپنے پیاروں سے بہت دور نہیں ہوتا تھا
یار تو اُن دنوں مشہور نہیں ہوتا تھا

مجھکو لگتا ہے تجھے دل کی دعا لگ گئی ہے
تیرے چہرے پر تو یہ نور نہیں ہوتا تھا

تیرے ہوتے بھی مسافت کے یہی مسئلے تھے
پر تھکاوٹ سے بدن چور نہیں ہوتا تھا

کوئی تو دکھ ہے جو واپس نہیں جانے دیتا
ورنہ میں گھر سے کبھی دور نہیں ہوتا تھا

اپنے پیاروں سے بہت دور نہیں ہوتا تھا
یار تو اُن دنوں مشہور نہیں ہوتا تھاe

اپنا تبصرہ بھیجیں