Aik Aur Taziyana Manzar Laga Hamein

Aik Aur Taziyana Manzar Laga Hamein

Aik Aur Taziyana Manzar Laga Hamein
Aa aye howay taza naye par laga hamein

Nadi charri hoi thi tu hum bhi thay mauj mein
Pani utar gaya tu bahut dar laga hamein

Dil peh yaqeen nahi tha tou so ab ke mahaz par
Dushman ka ek sawar bhi lashkar laga hamein

Goryoun se khelti hoi bachi ki aankh mein
Aansoo bhi aa gaya tou samandar laga hamein

Beta gira jo chat se patangon ke phair mein
Gul-e-aasman patang barabar laga hamein

Daad-e-mata-e- ajaz keh taqdeer mein na thi
Ilzaam-e- khud sari tha keh urr kar laga hamein

Aik aur taziyana manzar laga hamein
Aa aye howay taza naye par laga hamein
غزل
ایک اور تازیانہ منظر لگا ہمیں
آ آے ہوائے تازہ نئے پر لگا ہمیں

ندی چڑی ہوئی تھی تو ہم بھی تھے موج میں
پانی اُترگیا تو بہت ڈر لگا ہمیں

دل پہ یقین نہیں تھا تو سو اب کے محاذ پر
دشمن کا اک سوار بھی لشکر لگا ہمیں

گڑیوں سے کھیلتی ہوئی بچی کی آنکھ میں
آنسوں بھی آ گیا تو سمندر لگا ہمیں

بیٹا گرا جو چھت سے پتنگوں کے پھیر میں
گل آسماں پتنگ برابر لگا ہمیں

دادِ متاعِ عجزکہ تقدیر میں نہ تھی
الزام خود سری تھا کہ اُڑ کر لگا ہمیں

ایک اور تازیانہ منظر لگا ہمیں
آ آے ہوائے تازہ نئے پر لگا ہمیں

اپنا تبصرہ بھیجیں