Samjh Rahe Hain Aur Bolnay Ka Yara Nahi

Samjh Rahe Hain Aur Bolnay Ka Yara Nahi

Samjh Rahe Hain Aur Bolnay Ka Yara Nahi
Jo hamse mil ke bichar jaye wo hamara nahi

Samandaron ko bhi herat hoi k doobte wqat
Kisi ko hamne madad ke liye pukara nahi

Jo ham nahi thay tu phir kon tha sar e bazar
Jo keh raha tha keh bikna hamein gawara nahi

Abhi se barf ulajhne lagi hai balon se
Abhi tu qarz mah e sal bhi utara nahi

Ham ahl e dil hain mohabbaton ki nisbaton ke ameen
Hamare pas zameeno ka goshwara nahi

Samjh rahe hain aur bolnay ka yara nahi
Jo hamse mil ke bichar jaye wo hamara nahi
غزل
سمجھ رہے ہیں اور بولنے کا یارا نہیں
جو ہم سے مل کے بچھڑ جائے وہ ہمارا نہیں

سمندروں کو بھی حیرت ہوئی کہ ڈوبتے وقت
کسی کو ہم نے مدد کے لے پکارا نہیں

جو ہم نہیں تھے تو پھر کون تھا سر بازار
جو کہہ رہا تھا کہ بکنا ہمیں گوارہ نہیں

ابھی سے برف الجنھے لگی ہے بالوں سے
ابھی تو قرض ماہ سال بھی اتارا نہیں

ہم اہل دل ہیں محبت کی نسبتوں کی امیں
ہمارے پاس زمینوں کا گوشوارہ نہیں

سمجھ رہے ہیں اور بولنے کا یارا نہیں
جو ہم سے مل کے بچھڑ جائے وہ ہمارا نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں