Yeh Saneha Bhi Kam Nahi

Yeh Saneha Bhi Kam Nahi

Yeh Saneha Bhi Kam Nahi
Mujhe kisi ka gham nahi

Abhi nah jhok mere hazoor
Abhi yeh sar qalam nahi

Koi mera ghoror tha
Aur koi bharm nahi

Ab nahi tu phir sahi
Yeh aakhri janam nahi

Nahi utha sake gay aab
Ye tegh hai qasm nahi

Yeh saneha bhi kam nahi
Mujhe kisi ka gham nahi
غزل
یہ سانحہ بھی کم نہیں
مجھے کسی کا غم نہیں

ابھی نہ جھک میرے حضور
ابھی یہ سر قلم نہیں

کوئی میرا غرور تھا
اور کوئی بھرم نہیں

اب نہیں تو پھر سہی
یہ آخری جنم نہیں

نہیں اُٹھا سکے گے آب
یہ تیغ ہے قسم نہیں

یہ سانحہ بھی کم نہیں
مجھے کسی کا غم نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں