Yaad Tab Karte Ho Karne Ko Nah Ho Jab Kuch Bhi

Yaad Tab Karte Ho Karne Ko Nah Ho Jab Kuch Bhi

Yaad Tab Karte Ho Karne Ko Nah Ho Jab Kuch Bhi
Aur kehte ho tumhein ishq hai matlab kuch bhi

Ab jo aakay batatay ho keh woh shakhs aisa tha
Jab mere saath tha woh kyun nah kaha tab kuch bhi

Waqfay waqfay se mujh dekhne aate rehna
Hijar ki shab hai so ho sakta hai iss shab kuch bhi

Yaad tab karte ho karne ko nah ho jab kuch bhi
Aur kehte ho tumhein ishq hai matlab kuch bhi
غزل
یاد تب کرتے ہو کرنے کو نہ ہو جب کچھ بھی
اور کہتے ہو تمہیں عشق ہے مطلب کچھ بھی

اب جو آ کے بتاتے ہو کہ وہ شخص ایسا تھا
جب میرے ساتھ تھا وہ کیوں نہ کہا تب کچھ بھی

وقفے وقفے سے مجھے دیکھنے آتے رہنا
ہجر کی شب ہے سو ہو سکتا ہے اِس شب کچھ بھی

یاد تب کرتے ہو کرنے کو نہ ہو جب کچھ بھی
اور کہتے ہو تمہیں عشق ہے مطلب کچھ بھی

اپنا تبصرہ بھیجیں