Yaad Aaon Tou Bas Itni Si Inayat |Khalil Ur Rehman

Yaad Aaon Tou Bas Itni Si Inayat |Khalil Ur Rehman

Yaad Aaon Tou Bas Itni Si Inayat Karna
Apne badle hoye lehje ki wazahat karna

Tum tou chahat ka shaahkar howa karte thay
Kis se seekha hai mohabbat mein milawat karna

Hum sazaon ke haqdaar bane hain kab se
Tum hi keh don ke juram hai kiya mohabbat karna

Tere furqat mein yeh aankhen abhi tak nam hain
Kabhi aana mere aankhon ki zyarat karna

Yaad aaon tou bas itni si inayat karna
Apne badle hoye lehje ki wazahat karna
غزل
یاد آوں تو بس اتنی سی عنایت کرنا
اپنے بدلے ہوئے لہجے کی وضاحت کرنا

تم تو چاہت کا شاہکار ہوا کرتے تھے
کس سے سیکھا ہے محبت میں ملاوٹ کرنا

ہم سزاوں کے حقدار بنے ہیں کب سے
تم ہی کہ دوں کے جرم ہے کیا محبت کرنا

تیرے فرقت میں یہ آنکھیں ابھی تک نم ہیں
کبھی آنا میرے آنکھوں کی زیارت کرنا

یاد آوں تو بس اتنی سی عنایت کرنا
اپنے بدلے ہوئے لہجے کی وضاحت کرنا

اپنا تبصرہ بھیجیں