Wohi Pyaas Hai Wohi Dasht Hai| sham ki shayari urdu

Wohi Pyaas Hai Wohi Dasht Hai Wohi Gharana Hai

Wohi Pyaas Hai Wohi Dasht Hai Wohi Gharana Hai
Mashkizay se teer ka rishta purana hai

Subha sawere ran parna hai aur ghamsaan ka ran
Raton raat chala jaye jis jis ko jana hai

Aik chiragh aur aik kitaab aur aik umeed asasa
Us ke baad tou jo kuch hai wo sab afsaana hai

Darya par qabza tha jis ka us ki pyaas azaab
Jis ki dhalein chamak rahi theen wohi nishana hai

Kaasa-e-sham mein sooraj ka sar aur aawaz azan
Aur aawaz aazan kehti hai farz nibhana hai

Sab kehte hain aur koi din yeh hungama dahar
Dil kehta hai aik musafir aur bhi aana hai

Aik Jazeera us ke aagay peechay saat samandar
Saat samandar par suna hai aik khazana hai

Wohi pyaas hai wohi dasht hai wohi gharana hai
Mashkizay se teer ka rishta purana hai
غزل
وہی پیاس ہے وہی دشت ہے وہی گھرانا ہے
مشکیزے سے تیر کا رشتہ بہت پرانا ہے

صبح سویرے رن پڑنا ہے اور گھمسان کا رن
راتوں رات چلا جائے جس جس کو جانا ہے

ایک چراغ اور ایک کتاب اور ایک اُمید اثاثہ
اس کے بعد تو جو کچھ ہے وہ سب افسانہ ہے

دریا پر قبضہ تھا جس کا اس کی پیاس عذاب
جس کی ڈھالیں چمک رہی تھیں وہی نشانہ ہے

کاسہ شام میں سورج کا سر اور آواز اذاں
اور آواز آذان کہتی ہے فرض نبھانا ہے

سب کہتے ہیں اور کوئی دن یہ ہنگامہ دہر
دل کہتا ہے ایک مسافر اور بھی آنا ہے

ایک جزیرہ اس کے آگے پیچھے سات سمندر
سات سمندر پار سنا ہے ایک خزانہ ہے

وہی پیاس ہے وہی دشت ہے وہی گھرانا ہے
مشکیزے سے تیر کا رشتہ بہت پرانا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں