Waqt Hi Kam Tha Faisle Ke Liye

غزل
وقت ہی کم تھا فیصلے کے لئے
ورنہ میں آتا مشورے کے لئے
 
تم کو اچھے لگے تو تم رکھ لو
پھول توڑے تھے بیچنے کے لئے
 
گھنٹوں خاموش رہنا پڑتا ہے
آپ کے ساتھ بولنے کے لئے
 
سیکڑوں کنڈیاں لگا رہا ہوں
چند بٹنوں کو کھولنے کے لئے
 
ایک دیوار باغ سے پہلے
اک دوپٹا کھلے گلے کے لئے
 
ترک اپنی فلاح کر دی ہے
اور کیا ہو معاشرے کے لئے
 
لوگ آیات پڑھ کے سوتے ہیں
آپ کے خواب دیکھنے کے لئے
 
اب میں رستے میں لیٹ جاؤں کیا
جانے والوں کو روکنے کے لئے
Ghazal

Waqt Hi Kam Tha Faisle Ke Liye
Warna main aata mashware ke liye
 
Tum ko achchhe lage to tum rakh lo
Phul tode the bechne ke liye
 
Ghanton khamosh rahna padta hai
Aap ke sath bolne ke liye
 
Saikadon kundiyan laga raha hun
Chand batanon ko kholne ke liye
 
Ek diwar bagh se pahle
Ek dupatta khule gale ke liye
 
Tark apni falah kar di hai
Aur kya ho muashare ke liye
 
Log aayat padh ke sote hain
Aap ke khwab dekhne ke liye
 
Ab main raste mein let jaun kya
Jaane walon ko rokne ke liye

اپنا تبصرہ بھیجیں