Utha Hoon Ik Hujoom Tamanna| New Ghazal

Utha Hoon Ik Hujoom Tamanna| New Ghazal

Utha Hoon Ik Hujoom Tamanna Liye Howay
Dunya se ja raha hoon mein duniya liye howay

Muddat se gircha jalwa geh taur se khamosh
Aankhen hain ab bhi zauq tamasha liye howay

Dunyaye aazroo se kinara tu kar ke dekh
Dunya khari hai daulat dunya liye howay

Rooz azal se ishq hai nakam aarzoo
Dil hai magar hujoom tamanna liye howay

A kam nigah deeda dil se nigah kar
Har zarrah hai haqeeqat sahra liye howay

Hasta ki subah kon si mehfil ka hai maal
Aankhen khuli hain hasrat jalwa liye howay

Din bhar miri nazar mein hai woh yousaf bahar
Aayi hai raat khwab zulekha liye howay

Dil phir chala hai le ke tire aastan ki simt
Apni shakistagi ka sahara liye howay

Woh din kahan keh thi mujhe jeene ki aarzoo
Phirta hoon ab tu dil ka janaza liye howay

Utha hoon ik hujoom tamanna liye howay
Dunya se ja raha hoon mein duniya liye howay
غزل
اُٹھا ہوں اک ہجوم تمنا لئے ہوئے
دنیا سے جا رہاہوں میں دنیا لئے ہوے

مدت سے گرچہ جلوہ گہ طور سے خموش
آنکھیں ہیں اب بھی ذوق تماشا لئے ہوئے

دنیائے آرزو سے کنارہ تو کرکے دیکھ
دنیا کھڑی ہے دولت دنیا لئے ہوئے

روز ازل سے عشق ہے ناکام آرزو
دل ہے مگر ہجوم تمنا لئے ہوئے

اے کم نگاہ دیدہ دل سے نگاہ کر
ہر ذرہ ہے حقیقت صحرا لئے ہوئے

ہستہ کی صبح کون سی محفل کا ہے مال
آنکھیں کھلی ہیں حسرت جلوہ لئے ہوئے

دن بھر مری نظر میں ہے وہ یوسف بہار
آئی ہے رات خواب زلیخا لئے ہوئے

دل پھر چلا ہے لے کے ترے آستاں کی سمت
اپنی شکستگی کا سہارا لئے ہوئے

وہ دن کہاں کہ تھی مجھے جینے کی آرزو
پھر تا ہوں اب تو دل کا جنازا لئے ہوئے

اُٹھا ہوں اک ہجوم تمنا لئے ہوئے
دنیا سے جا رہاہوں میں دنیا لئے ہوے

اپنا تبصرہ بھیجیں