Usi Wadi Mein Tum Ab Jadah| Ehsan Danish Ghazal

Usi Wadi Mein Tum Ab Jadah| Ehsan Danish Ghazal

Usi Wadi Mein Tum Ab Jadah Pema Ho Jahan Mein Tha
Zamane ki bhari mehfil mein tanha ho jahan mein tha

Meri kotah beni ab tumhain fitrat ne bakhshi hai
Wahan ab tum bhi mayoos tamanna ho jahan mein tha
 
Mujhe taane diya karte thay lekin khair se tum bhi
Usi manzar mein masroof-e-tamasha ho jahan mein tha

Yeh zabat gham ki bakhshish hai muqaddar ke karishme hain
Tumhari bhi wohi le day ke duniya ho jahaan mein tha

Usi wadi mein tum ab jadah pema ho jahan mein tha
Zamane ki bhari mehfil mein tanha ho jahan mein tha
غزل
اُسی وادی میں تم اب جادہ پیما ہو جہاں میں تھا
زمانے کی بھری محفل میں تنہا ہو جہاں میں تھا

مری کوتاہ بینی اب تمہیں فطرت نے بخشی ہے
وہاں اب تم بھی مایوس تمنا ہو جہاں میں تھا

مجھے طعنے دیا کرتے تھے لیکن خیر سے تم بھی
اُسی منظر میں مصروفِ تماشا ہو جہاں میں تھا

یہ ضبط غم کی بخشش ہے مقدر کے کرشمے ہیں
تمہاری بھی وہی لے دے کے دنیا ہو جہاں میں تھا

اُسی وادی میں تم اب جادہ پیما ہو جہاں میں تھا
زمانے کی بھری محفل میں تنہا ہو جہاں میں تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں