Teri Khushboo Ka Pata Karti Hai| Parveen Shakir

Teri Khushboo Ka Pata Karti Hai| Parveen Shakir

Teri Khushboo Ka Pata Karti Hai
Mujh peh ehsan howa karti hai

Shab ki tanhai mein ab to aksar
Guftagu tujhe se raha karti hai

Dil ko uss rah peh chalna hi nahi
Jo mujhe tujh se juda karti hai

Zindagi meri thi lekin ab to
Tere kehne mein raha karti hai

Uss ne dekha hi nahi warna yeh aankh
Dil ka ahwal kaha karti hai

Sham parte hi kisi shakhs ki yad
Kocha jaan mein sada karti hai

Dukh howa karta hai kuchh aur bayaan
Baat kuchh aur howa karti hai

Abar barse tou inayat uss ki
Shakh tou sirf dua karti hai

Masla jab bhi utha chiraghun ka
Faisla sirf hawa karti hai

Teri khushboo ka pata karti hai
Mujh peh ehsan howa karti hai
غزل
تیری خوشبو کا پتا کرتی ہے
مجھ پہ احسان ہوا کرتی ہے

شب کی تنہائی میں اب تو اکثر
گفتگو تجھے سے رہا کرتی ہے

دل کو اُس راہ پہ چلنا ہی نہیں
جو مجھے تجھ سے جدا کرتی ہے

زندگی میری تھی لیکن اب تو
تیرے کہنے میں رہا کرتی ہے

اُس نے دیکھا ہی نہیں ورنہ یہ آنکھ
دل کا احوال کہا کرتی ہے

شام پڑتے ہی کسی شخص کی یاد
کوچہ جاں میں صدا کرتی ہے

دکھ ہوا کرتا ہے کچھ اور بیاں
بات کچھ اور ہوا کرتی ہے

ابر برسے تو عنایت اُس کی
شاخ تو صرف دعا کرتی ہے

مسلہ جب بھی اُٹھا چراغوں کا
فیصلہ صرف ہوا کرتی ہے

تیری خوشبو کا پتا کرتی ہے
مجھ پہ احسان ہوا کرتی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں