Teri Har Baat Mohabbat Main Gawara Kar Ke

Ghazal
Teri Har Baat Mohabbat Main Gawara Kar Ke
Dil ke bazaar mein baithe hain khasara kar ke
 
Atay jatay hain kai rang mere chehre par
Log letay hain maza zikr tumhaara kar ke
 
Ek chingari nazar aai thi basti mein usay
Wo alag hat gaya aandhi ko ishaara kar ke
 
Aasmanon ki taraf phenk diya hai main ne
Chand matti ke charaghon ko sitara kar ke
 
Main wo daryaa hun keh har bund bhanwar hai jis ki
Tum ne achchha hi kiya mujh se kinara kar ke
 
Muntazir hun keh sitaron ki zara aankh lage
Chand ko chhat pur bula lunga ishaara kar ke
غزل
تیری ہر بات محبت میں گوارا کر کے
دل کے بازار میں بیٹھے ہیں خسارہ کر کے
 
آتے جاتے ہیں کئی رنگ مرے چہرے پر
لوگ لیتے ہیں مزا ذکر تمہارا کر کے
 
ایک چنگاری نظر آئی تھی بستی میں اسے
وہ الگ ہٹ گیا آندھی کو اشارہ کر کے
 
آسمانوں کی طرف پھینک دیا ہے میں نے
چند مٹی کے چراغوں کو ستارہ کر کے
 
میں وہ دریا ہوں کہ ہر بوند بھنور ہے جس کی
تم نے اچھا ہی کیا مجھ سے کنارہ کر کے
 
منتظر ہوں کہ ستاروں کی ذرا آنکھ لگے
چاند کو چھت پر بلا لوں گا اشارہ کر کے

اپنا تبصرہ بھیجیں