Shak Guzra Tha Pinjre Par| Zia Mazkoor Ghazal

Shak Guzra Tha Pinjre Par| Zia Mazkoor Ghazal

Shak Guzra Tha Pinjre Par
Mein ne foran khule par

Zang ne aakhri dastak di
Lohe ke darwaze par

Aik chota sa kaam kiya
Bohat bare paimane par

Aayat parh kar phoonki thi
Tootne wale dhagay par

Cheekh rahe hain bhooke pait
Na maloom janaze par

Rehmat bhi aur jhagra bhi
Beti paida hone par

Shak guzra tha pinjre par
Mein ne foran khule par
غزل
شک گزرا تھا پنجرے پر
میں نے فوراً کھلے پر

زنگ نے آخری دستک دی
لوہے کے دروازے پر

ایک چھوٹا سا کام کیا
بہت بڑے پیمانے پر

آیت پڑھ کر پھونکی تھی
ٹوٹنے والے دھاگے پر

چیخ رہے ہیں بھوکے پیٹ
نا معلوم جنازے پر

رحمت بھی اور جھگڑا بھی
بیٹی پیدا ہونے پر

شک گزرا تھا پنجرے پر
میں نے فوراً کھلے پر

اپنا تبصرہ بھیجیں