Pahli Aawaz

پہلی آواز:

اتنا سناٹا کہ جیسے ہو سکوت صحرا
ایسی تاریکی کہ آنکھوں نے دہائی دی ہے

جانے زنداں سے ادھر کون سے منظر ہوں گے
مجھ کو دیوار ہی دیوار دکھائی دی ہے

دور اک فاختہ بولی ہے بہت دور کہیں
پہلی آواز محبت کی سنائی دی ہے

:Pehli Awaz
itna sannata ki jaise ho sukut-e-sahra
aisi tariki ki aankhon ne duhai di hai

jaane zindan se udhar kaun se manzar honge
mujh ko diwar hi diwar dikhai di hai

dur ek fakhta boli hai bahut dur kahin
pahli aawaz mohabbat ki sunai di hai

اپنا تبصرہ بھیجیں