Mere Bas Main Nahi Warna Qudrat Ka Lekha Howa

Ghazal:
Mere Bas Main Nahi Warna Qudrat Ka Lekha Howa Kaattaa
Tere hisse main aae bure din koi dusara kaattaa

Larion se zeyda bahaow tha tere har ek lafaz main
Main ishara nahi kaat sakta teri baat kia kaattaa

Main ne bhi zindagi aur shaab e hijar kaati hai sab ki tarah
Waise behtar to yeh tha keh main kam se kam kuch nia kaattaa

Tere hote hue moom bati bujhi kisi aur ne
Kia khushi reh gi thi janam din ki main kake kia kaattaa

Koi bhi to nahi jo mere bhoke rehne pe naraz ho
Jail main teri tasweer hoti tu hans kar saza kaattaa

Mere Bas Main Nahi Warna Qudrat Ka Lekha Howa Kaattaa
Tere hisse main aae bure din koi dusara kaattaa
غزل
میرے بس میں نہیں ورنہ قدرت کا لکھا ہو کاٹتا
تیرے حصے میں آئے بُرے دن کوئی دوسرا کاٹتا

لاریوں سے زیادہ بہاؤ تھا تیرے ہر اک لفظ میں
میں اشارہ نہیں کاٹ سکتا تیری بات کیا کاٹتا

میں نے بھی زندگی اور شبِ ہجر کاٹی ہے سب کی طرح
ویسے بہتر تو یہ تھا کہ میں کم سے کم کچھ نیا کاٹتا

تیرے ہوتے ہوئے موم بتی بجھائی کسی اور نے
کیا خوشی رہے گئی تھی جنم دن کی میں کیک کیا کاٹتا

کوئی بھی تو نہیں جو میرے بھوکے رہنے پہ ناراض ہو
جیل میں تیری تصویر ہوتی تو ہس کر سزا کاٹتا

میرے بس میں نہیں ورنہ قدرت کا لکھا ہو کاٹتا
تیرے حصے میں آئے بُرے دن کوئی دوسرا کاٹتاe

اپنا تبصرہ بھیجیں