Kiya Badlon Mein Safar Zindagi Bhar

Kiya Badlon Mein Safar Zindagi Bhar

Kiya Badlon Mein Safar Zindagi Bhar
Na banya zamee per ghar zindagi bhar

Sabhi zindagi ke mazay loot’tay hain
Na aya hamein yeh hunar zindagi bhar
 
Mohabbat rahi char din zindagi mein
Raha char din ka asar zindagi bhar
 
Kiya badlon mein safar zindagi bhar
Na banya zamee per ghar zindagi bhar
غزل
کیا بادلوں میں سفر زندگی بھر
نہ بنایا زمیں پر گھر زندگی بھر
 
سبھی زندگی کے مزے لوٹتے ہیں
نہ آیا ہمیں یہ ہنر زندگی بھر
 
محبت رہی چار دن زندگی میں
رہا چار دن کا اثر زندگی بھر
 
کیا بادلوں میں سفر زندگی بھر
نہ بنایا زمیں پر گھر زندگی بھر

اپنا تبصرہ بھیجیں