Kamina Pan Bhi Dekhaon Tou Hansane Lagtay Hain

Kamina Pan Bhi Dekhaon Tou Hansane Lagtay Hain

Kamina Pan Bhi Dekhaon Tou Hansane Lagtay Hain
Jo gehre dost hain mere mujhe samjhtay hain

Usay maaf kia keh wo us ko chahta tha
Wagrna ham jo harifon ka haal kertay hain

Bas aik bar mujhe mazi bhool jane day
Wo khud pe aahein bharin gaye jo kaan bhartay hain

Talaqat barhane se aik raz khula
Jinhain glay se lagao galay hi partay hain

Jo tere samne alhamdo lilha kehtay rahe
Wo tere bad khuda se bahot jharay hain

Hamare gaon ki sarkon per rait nachti hai
Aur us ke zare bahot door tak bikhartay hain

Kamina pan bhi dekhaon tou hansane lagtay hain
Jo gehre dost hain mere mujhe samjhtay hain
غزل
کمینہ پن بھی دکھاؤں تو ہنسنے لگتے ہیں
جو گہرے دوست ہیں میرے مجھے سمجھتے ہیں

اُسے معاف کیا کہ وہ اُس کو چاہتا تھا
وگرنہ ہم جو حریفوں کا حال کرتے ہیں

بس ایک بار مجھے ماضی بھول جانے دے
وہ خود پہ آہیں بھریں گئے جو کان بھرتے ہیں

تعلقات بڑھانے سے ایک راز کھلا
جنہیں گلے سے لگاؤ گلے ہی پڑھتے ہیں

جو تیرے سامنے الحمدُولِلَہ کہتے رہے
وہ تیرے بعد خدا سے بہت جھگڑتے ہیں

ہمارے گاؤں کی سڑکوں پر ریت ناچتی ہے
اور اُس کے زرے بہت دور تک بکھرتے ہیں

کمینہ پن بھی دکھاؤں تو ہنسنے لگتے ہیں
جو گہرے دوست ہیں میرے مجھے سمجھتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں