Kabhi Pani Se Aaj Tak Dekh Raha Hoon Unhain

Kabhi Pani Se Aaj Tak Dekh Raha Hoon Unhain

Kabhi Pani Se Aaj Tak Dekh Raha Hoon Unhain Hirani Se
Admi ban ke mera admion mein rehna aik alag waza hai darweshi-o- sultani se

Log ghasib nahi haqdar samjhte hain mujhe
Be-ghari lakh ghanimat hai jahaan baani se

Sirf Allah ka kiya zikr bot’ton ko bhi sho’our
Ham ne chaha hai bare jazba-e-emani se

Kabhi pani se aaj tak dekh raha hoon unhain hirani se
Admi ban ke mera admion mein rehna aik alg waza hai darweshi-o- sultani se
غزل
کبھی پانی سے آج تک دیکھ رہا ہوں اُنہیں حیرانی سے
آدمی بن کے میرا آدمیوں میں رہنا ایک الگ واضع ہے درویشی و سلطانی سے

لوگ غصب نہیں حقدار سمجھتے ہیں مجھے
بے گھری لاکھ غنیمت ہے جہان بانی سے

صرف اللہ کا کیا زکر بتوں کو بھی شعؔور
ہم نے چاہا ہے بڑے جزبہِ ایمانی سے

کبھی پانی سے آج تک دیکھ رہا ہوں اُنہیں حیرانی سے
آدمی بن کے میرا آدمیوں میں رہنا ایک الگ واضع ہے درویشی و سلطانی سے

اپنا تبصرہ بھیجیں