Jis Roz Hamara Kooch Hoga

Jis Roz Hamara Kooch Hoga

Jis Roz Hamara Kooch Hoga
Phoolon ki dukanain band hongi

Sherin sukhano’n ke harf-e-dushnam
Be mihir zabanain band hongi

Palkon pe nami ka zikar hi kia
Yadon ka sorakh tak na hoga

Humwari aur nafs slamat
Dil par koi daagh tak na hoga

Pamali khawab ki kahani
Kehne ko chiragh tak na hoga

Mabood es akhri safar mein
Tanhai ko surkh ro hi rakhna

Joz tere nahi koi nigahdar
Es din bhi khayal tu hi rakhna

Jis ankh ne umer bhar rolaya
Us ankh ko be-wozoo hi rakhna

Jis roz hamara kooch hoga
Phoolon ki dukanain band hongi
غزل
جس روز ہمارا کوچ ہوگا
پھولوں کی دُکانیں بند ہوں گی

شیریں سخنوں کے حرفِ دشنام
بے مہر زبانیں بند ہوں گی

پلکوں پہ نمی کا زکر ہی کیا
یادوں کا سوراخ تک نہ ہوگا

ہمواری ہر نفس سلامت
دل پر کوئی داغ تک نہ ہوگا

پامالی خواب کی کہانی
کہنے کو چراغ تک نہ ہوگا

معبود اس آخری سفرمیں
تنہائی کو سرخ رو ہی رکھنا

جز تیرے نہیں کوئی نگہ دار
اس دن بھی خیال توہی رکھنا

جس انکھ نے عمر بھر رلایا
اس انکھ کو بے وضو ہی رکھنا

جس روز ہمارا کوچ ہوگا
پھولوں کی دُکانیں بند ہوں گی

اپنا تبصرہ بھیجیں