Jab Aankhen Dukhnay Lagen| Urdu Ghazal

Jab Aankhen Dukhnay Lagen| Urdu Ghazal

Jab Aankhen Dukhnay Lagen Dekh Kar Dua Ki Taraf
Rujoo karne lage log phir dawa ki taraf

Hamara kam faqt dekhna hai dekh rahe
Khuda hamari taraf aur hum khuda ki taraf

Zara se hosh mein aate hi ishq se bhagay
Keh hum nashe mein hi aaye thay iss bala ki taraf

Kuch iss liye bhi hamein kamsini mein bandhte hain
Bazorg Dartay hain hum chal na den zina ki taraf

Tamam bastiyan wiraan hain khamoshi hai
Chale gaye sabhi gahak kisi sadaa ki taraf

Zara si sharam bhi ho tou chiragh bujh jayen
Keh mom baiti ne rukh kar liya hawa ki taraf

Hamari zindagi barbad hogayi lekin
Qasoor war nah laye gaye sazaa ki taraf

Jab aankhen dukhnay lagen dekh kar dua ki taraf
Rujoo karne lage log phir dawa ki taraf
غزل
جب آنکھیں دُکھنے لگیں دیکھ کر دعا کی طرف
رجوع کرنے لگے لوگ پھر دوا کی طرف

ہمارا کام فقط دیکھنا ہے دیکھ رہے
خدا ہماری طرف اور ہم خدا کی طرف

ذرا سے ہوش میں آتے ہی عشق سے بھاگے
کہ ہم نشے میں ہی آئے تھے اِس بلا کی طرف

کچھ اس لیے بھی ہمیں کمسنی میں باندھتے ہیں
بزرگ ڈرتے ہیں ہم چل نہ دیں زنا کی طرف

تمام بستیاں ویران ہیں خاموشی ہے
چلے گئے سبھی گاہک کسی صدا کی طرف

ذرا سی شرم بھی ہو تو چراغ بجھ جائیں
کہ موم بتی نے رخ کر لیا ہوا کی طرف

ہماری زندگی برباد ہوگئی لیکن
قصور وارنہ لائے گئے سزا کی طرف

جب آنکھیں دُکھنے لگیں دیکھ کر دعا کی طرف
رجوع کرنے لگے لوگ پھر دوا کی طرف

اپنا تبصرہ بھیجیں