Usay Hi Theek Se Aaya Nahi Bulana Dost | Afkar Alvi

Usay Hi Theek Se Aaya Nahi Bulana Dost |Afkar Alvi

Usay Hi Theek Se Aaya Nahi Bulana Dost
Wagarna kon nahi chahta purana dost

Bas aik lamha usay mere sath dekha geya
Aur us ke bad mera hogeya zamana dost

Mein ishq yafta larka hoon khoob janta hoon
Kisi ka aana ya jana ya aana jana dost

Tou aisi shakal bana keh lage tou hijar mein hai
Yeh kya keh pait ke har aik ko batana dost

Mein aaj raat tujhe dekhne nahi aaya
So kal peh chhorde yeh facebook chalana dost

Mein aik arsay ka pyasa tha aur us ne kaha
To aaj raat mere pass khana khaana dost

Hamare sath bhi kam sanehe nahi guzre
Hamare baad hamare bhi din manana dost

Usay hi theek se aaya nahi bulana dost
Wagarna kon nahi chahta purana dost
غزل
اُسے ہی ٹھیک سے آیا نہیں بلانا دوست
وگرنہ کون نہیں چاہتا پرانا دوست

بس ایک لمحہ اسے میرے ساتھ دیکھا گیا
اور اس کے بعد مرا ہو گیا زمانہ دوست

میں عشق یافتہ لڑکا ہوں خوب جانتا ہوں
کسی کا آنا یا جانا یا آنا جانا دوست

تو ایسی شکل بنا کہ لگے تو ہجر میں ہے
یہ کیا کہ پیٹ کے ہر ایک کو بتانا دوست

میں آج رات تجھے دیکھنے نہیں آیا
سو کل پہ چھوڑ دے یہ فیسبک چلانا دوست

میں ایک عرصے کا پیاسا تھا اور اس نے کہا
تو آج رات مرے پاس کھانا کھانا دوست

ہمارے ساتھ بھی کم سانحے نہیں گزرے
ہمارے بعد ہمارے بھی دن منانا دوست

اُسے ہی ٹھیک سے آیا نہیں بلانا دوست
وگرنہ کون نہیں چاہتا پرانا دوست

اپنا تبصرہ بھیجیں