Itfaq Apni Jagha Khush Qismati Apni Jagah

Itfaq Apni Jagha Khush Qismati Apni Jagah

Itefaq Apni Jagha Khush Qismati Apni Jagah
Khud banata hai jahaan mein admi apni jagah

Keh tou sakta hun magar majbour kar sakta nahi
Ekhtiyar apni jagah hai be-basi apni jagah

Kuch na kuch sachai hoti hai nehaan har baat mein
Kehne walay theek kehtay hain sabhi apni jagah

Sirf us ke hont kagaz per bana deta hoon mein
Khud bana leti honton per hansi apni jagha

Dost kehta hoon tumhain shayar nahi kehta sho’our
Dosti apni jagah hai shayari apni jagah hai

Itefaq apni jagha khush qasmiti apni jagah
Khud baata hai jahaan mein admi apni jagah
غزل
اتفاق اپنی جگہ خوش قسمتی اپنی جگہ
خود بناتا ہے جہاں میں آدمی اپنی جگہ

کہہ تو سکتا ہوں مگر مجبور کرسکتا نہیں
اختیار اپنی جگہ ہے بے بسی اپنی جگہ

کچھ نہ کچھ سچائی ہوتی ہے نہاں ہر بات میں
کہنے والے ٹھیک کہتے ہیں سبھی اپنی جگہ

صرف اُس کے ہونٹ کاغذ پر بنا دیتا ہوں میں
خود بنا لیتی ہے ہونٹوں پر ہسی اپنی جگہ

دوست کہتا ہوں تمیں شاعر نہیں کہتا شعؔور
دوستی اپنی جگہ ہے شاعری اپنی جگہ ہے

اتفاق اپنی جگہ خوش قسمتی اپنی جگہ
خود بناتا ہے جہاں میں آدمی اپنی جگہ
Poet: Anwar Shoor

اپنا تبصرہ بھیجیں