Iss Aas Peh Moun More Ke Bethi Hoon Mein Kab Se

Iss Aas Peh Moun More Ke Bethi Hoon Mein Kab Se

Iss Aas Peh Moun More Ke Bethi Hoon Mein Kab Se
Koi tu sadaa dega mujhe aa kay aqab se

Kuch waqt lagay ga usay uthne mein yaqeenan
Jo shakhs gira aaj mere dast-e-talab se

Phir mere khadokhaal to masmaar nah krte
Waqif jo nah thay tum abhi tameer ke dhab se

Mein janti hoon subah farozan hai yahi pass
Mein khud hi gorezan hoon azadari shab se

Mein taiz hawa aur tou ik shak bureda
Ab kon bachaye ga tujhay mere ghazab se

Malik teri taqseem peh razi bah raza hoon
Nikla hai kabhi koi bhi shikwa mere lab se

Ab tum bhi lateefon ko zara sher mein dhalo
Ab log bohat dour hain sanjeeda adab se

Iss aas peh moun more ke bethi hoon mein kab se
Koi tu sadaa dega mujhe aa kay aqab se
غزل
اِس آس پہ منہ موڑ کے بیٹھی ہوں میں کب سے
کوئی تو صدا دے گا مجھے آ کے عقب سے

کچھ وقت لگے گا اُسے اُٹھنے میں یقیناً
جو شخص گرا آج مرے دستِ طلب سے

پھر میرے خدوخال تو مسمار نہ کرتے
واقف جو نہ تھے تم ابھی تعمیر کے ڈھب سے

میں جانتی ہوں صبح فروزاں ہے یہی پاس
میں خود ہی گریزاں ہوں عزاداری شب سے

میں تیز ہوا اور تو اک شاخ بریدہ
اب کون بچائے گا تجھے میرے غضب سے

مالک تری تقسیم پہ راضی بہ رضا ہوں
نکلا ہے کبھی کوئی بھی شکوہ مرے لب سے

اب تم بھی لطیفوں کو ذرا شعر میں ڈھالو
اب لوگ بہت دور ہیں سنجیدہ ادب سے

اِس آس پہ منہ موڑ کے بیٹھی ہوں میں کب سے
کوئی تو صدا دے گا مجھے آ کے عقب سے

اپنا تبصرہ بھیجیں