Hawa Ke Parde Mein Kon Hai| Famous Poem's

Hawa Ke Parde Mein Kon Hai| Famous Poem’s

Hawa Ke Parde Mein Kon Hai
Jo chiragh ki lo se khailta hai
Koi tou hoga

Jo khilat intesab pehna ke waqat ki ro se khailta hai
Koi tou hoga
Hijab ko ramz noor kehta hai
Aur par tu se khailta hai

Koi tou hoga
Koi nahi hai
Kahin nahi hai
Yeh khush yaqeenoo ke khush gumaano ke wahme hain
Jo har sawali se bait-e-aitbaar letay hain

Tu kon hai woh jo loh aab rawan peh sooraj ko sabat karta hai
Aur badal uchaalta hai hai
Jo badloon ko samandaron par koshed karta hai

Aur batan sadaf mein khurshaid dhalta hai
Woh sang mein aag aag mein rang rang

Mein roshni ke imkaan rakhne wala
Woh khaak mein soot soot mein harf harf mein zindagi ke
Saman rakhne wala

Nahi koi hai
Kahin koi hai
Koi tou hoga
Hawa ke parde mein kon hai jo chiragh ki lo se khailta hai
نظم
ہوا کے پردے میں کون ہے
جو چراغ کی لو سے کھیلتا ہے
کوئی تو ہوگا
 
جو خلعت انتساب پہنا کے وقت کی رو سے کھیلتا ہے
کوئی تو ہوگا
حجاب کو رمز نور کہتا ہے
اور پر تو سے کھیلتا ہے

کوئی تو ہوگا
کوئی نہیں ہے
کہیں نہیں ہے
یہ خوش یقینوں کےخوش گمانوں کے واہمے ہیں
جو ہر سوالی سے بیعت اعتبار لیتے ہیں

تو کون ہے وہ جو لوح آب رواں پہ سورج کو ثبت کرتا ہے
اور بادل اُچھالتا ہے

جو بادلوں کو سمندروں پر کشید کرتا ہے
اور بطن صدف میں خورشید ڈھالتا ہے

وہ سنگ میں آگ آگ میں رنگ رنگ میں روشنی کے امکان رکھنے والا
وہ خاک میں صوت صوت میں حرف، حرف میں زندگی کے

سامان رکھنے والا
نہیں کوئی ہے
کہیں کوئی ہے
کوئی تو ہوگا

ہوا کے پردے میں کون ہے
جو چراغ کی لو سے کھیلتا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں