Gardish Saghir Sabu Ke Darmiyan

Gardish Saghir Sabu Ke Darmiyan| Urdu Ghazal

Gardish Saghir Sabu Ke Darmiyan
Zindagi hai hao hoo ke darmiyan

Zakhm aur poshak bhi rakhe gaye
Aaina aur aab jo ke darmiyan

Teesra rasta kidhar ko jaye hai
Aarzoo aur justajoo ke darmiyan

Kitni be mani si hai yeh zindagi
Khamoshi aur guftagu ke darmiyan

Zindagi tarjeeh kis ko deti hai
Sabz ro aur khosh gulu ke darmiyan

Yad ki ik ajnabi parchai hai
Rang-o-boo-o-kaakh-o-ko ke darmiyan

Waqt se bach kar nikal jawon kahin
Aik dar hai chaarso ke darmiyan

Mera chehra dusron se mukhtalif
Farq hai kya yeh lahoo ke darmiyan

Gardish saghir sabu ke darmiyan
Zindagi hai hao hoo ke darmiyan
غزل
گردش ساغر سبو کے درمیاں
زندگی ہے ہاؤ ہو کے درمیاں

زخم اور پوشاک بھی رکھے گئے
آئنہ اور آب جو کے درمیاں

تیسرا رستہ کدھر کو جائے ہے
آرزو اور جستجو کے درمیاں

کتنی بے معنی سی ہے یہ زندگی
خاموشی اور گفتگو کے درمیاں

زندگی ترجیح کس کو دیتی ہے
سبز رو اور خوش گلو کے درمیاں

یاد کی اک اجنبی پرچھائی ہے
رنگ و بو و کاخ و کو کے درمیاں

وقت سے بچ کر نکل جاؤں کہیں
ایک در ہے چار سو کے درمیاں

میرا چہرہ دوسروں سے مختلف
فرق ہے کیا یہ لہو کے درمیاں

گردش ساغر سبو کے درمیاں
زندگی ہے ہاؤ ہو کے درمیاں

اپنا تبصرہ بھیجیں