Gali Koochon Mein Hangama Bipa Karna Padega

Gali Koochon Mein Hangama Bipa Karna Padega

Gali Koochon Mein Hangama Bipa Karna Padega
Jo dil mein hai ab us ka tazakrah karna padega

Natija karbala se mukhtalif ho ya wohi ho
Madinah chorne ka faisla karna padega

Wo kya manzil jahan se rastay aagay nikal jayen
So ab phir ek safar ka silsila karna padega

Lahu denay lagi hai chashm-e-khoon basta so es bar
Bhari aankhon se khawabon ko riha karna padega

Mubaada qissa-e-ahl-e-junun na gufta reh jaye
Naye mazmoon ka lehja naya karna padega

Darakhton par samar aane se pehle aye thay phool
Pholon ke baad kya hoga pata karna padega

Ganwa bhethe teri khafir hum apne mahr-o-mahitab
Bata ab aye zamane aur kya karna padega

Gali koochon mein hangama bipa karna padega
Jo dil mein hai ab us ka tazakrah karna padega
غزل
گلی کوچوں میں ہنگامہ بپا کرنا پڑے گا
جو دل میں ہے اب اس کا تذکرہ کرنا پڑے گا

نتیجہ کربلا سے مختلف ہو یا وہی ہو
مدینہ چھوڑنے کا فیصلہ کرنا پڑے گا

وہ کیا منزل جہاں سے راستے آگے نکل جائیں
سو اب پھر اک سفر کا سلسلہ کرنا پڑے گا

لہو دینے لگی ہے چشم خوں بستہ سو اس بار
بھری انکھوں سے خوابوں کو رہا کرنا پڑے گا

مبادا قصہ اہل جنوں ناگفتہ رہ جائے
نئے مضموں کا لہجہ نیا کرنا پڑے گا

درختوں پر ثمر انے سےپہلے آئے تھے پھول
پھلوں کے بعد کیا ہوگا پتہ کرنا پڑے گا

گنوا بیٹھے تری خاطر ہم اپنے مہر و ماہتاب
بتا اب اے زمانے اور کیا کرنا پڑے گا

گلی کوچوں میں ہنگامہ بپا کرنا پڑے گا
جو دل میں ہے اب اس کا تذکرہ کرنا پڑے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں