Ek Suraj Hai Jo Sham Dhale Mujhe Parsa Dane

Ek Suraj Hai Jo Sham Dhale Mujhe Parsa Dane

Ek Suraj Hai Jo Sham Dhale Mujhe Parsa Dane Aata Hai
Un pholon ka jo mere laho mein khilne thay aur khile nahi

Un logon ka jo kisi morr par milne thay aur mile nahi
Ek khushbo hai jo basti basti mera pecha karti hai

Aur apne ji ki bat batate darti hai
Ek darya hai jo janam janam ki piyas bujhane aata

Aur angare barsata hai
Aur yeh suraj aur yeh khushbo yeh darya

Meri aan baan ke biri hain
Sab meri jaan ke biri hain

Ek suraj hai jo sham dhale mujhe parsa dane aata hai
Un pholon ka jo mere laho mein khilne thay aur khile nahi
نظم
اک سورج ہے جو شام ڈھلے مجھے پرسا دینے آتا ہے
ان پھولوں کا جو میرے لہو میں کھلنے تھے اور کھلے نہیں

ان لوگوں کا جو کسی موڑ پر ملنے تھے اورملے نہیں
اک خوشبو ہے جو بستی بستی میرا پیچھا کرتی ہے

اور اپنے جی کی بات بتاتے ڈرتی ہے
اک دریا ہے جو جنم جنم کی پیاس بجھانے اتا ہے

اور انگارے برساتا ہے
اور یہ سورج اور یہ خوشبو اور یہ دریا

مری آن بان کے بیری ہیں
سب میری جان کے بیری ہیں

اک سورج ہے جو شام ڈھلے مجھے پرسا دینے آتا ہے
ان پھولوں کا جو میرے لہو میں کھلنے تھے اور کھلے نہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں